حویلیاں میں حادثے کے شکار طیارے کی تحقیقاتی رپورٹ ۔۔۔

حویلیاں میں حادثے کے شکار طیارے کی تحقیقاتی رپورٹ ۔۔۔

چار سال کے بعد جاری کردی گئی ۔۔طیارے کو دوہزار سولہ میں حادثہ پیش آیا تھا۔ حادثے میں معروف نعت خواں جنید جمشید سینتالیس مسافر جاں بحق ہوگئے تھے ۔۔۔

تحقیقاتی رپورٹ کے مطابق ۔۔۔

دوران پرواز طیارے کا ایک انجن بند ہوگیا دوسرے کا بلیڈ ٹوٹا ہو اتھا۔ طیارہ اڑانے والے پائلٹ نے بھی پرواز سے پہلے انجن میں خرابی کی کوئی نشاندہی نہیں کی ۔۔۔

طیارے کےانجن کا بلیڈ پشاور سے چترال جاتے ہوئے ٹوٹا۔ دوران پرواز  انجن خراب ہونے کے باعث اے ٹی آر تیارے کی رفتار کم ہوئی ۔ جس کے باعث طیارہ حادثے کا شکار ہوا

رپورٹ میں مزید کہا گیا کہ ۔ اے ٹی آرطیارے کی آخری بار مرمت کینڈا میں ہوئی تھی۔ طیارے کے انجن کے دس ہزار گھنٹے مکمل ہونے پر اسے اوور ہال بھی نہیں کیا گیا تھا۔۔۔