Warning: "continue" targeting switch is equivalent to "break". Did you mean to use "continue 2"? in /home/ch51dm/public_html/templates/interactive/lib/menu/GKBase.class.php on line 114

Warning: "continue" targeting switch is equivalent to "break". Did you mean to use "continue 2"? in /home/ch51dm/public_html/templates/interactive/lib/menu/GKHandheld.php on line 76
انڈین پریمیئر لیگ میں شامل کھلاڑیوں کے کورونا ٹیسٹ مثبت

انڈین پریمیئر لیگ میں شامل کھلاڑیوں کے کورونا ٹیسٹ مثبت

نئی دہلی(نیوز ڈیسک) انڈین پریمیئر لیگ (آئی پی ایل) کے 14 ویں ایڈیشن کے آغاز سے قبل ہی لیگ میں شامل کھلاڑیوں اور عملے پر کورونا نے وار شروع کر دیے ہیں. نو اپریل سے شروع ہونے والے ایونٹ کا افتتاحی میچ دفاعی چیمپئن ممبئی انڈینز اور رائل چیلنجرز بنگلور کے درمیان چنئی میں کھیلا جائے گا ایونٹ کو عالمی وبا سے بچانے کے لیے تماشائیوں کو گراؤنڈ میں میچ دیکھنے کی اجازت نہیں ہو گی تاہم ایونٹ کے آغاز سے قبل ہی دونوں ٹیموں میں کورونا کے مثبت کیسز سامنے آئے ہیں.
ایونٹ میں شامل فرنچائز رائل چیلنجرز بنگلور نے بدھ کو اپنے ایک ٹوئٹ میں تصدیق کی ہے کہ ٹیم میں شامل غیر ملکی کھلاڑی ڈینئل سیمز کا کورونا ٹیسٹ مثبت آیا ہے جس کے بعد انہیں آئسولیٹ کر دیا گیا ہے بیان کے مطابق آل راؤنڈر کھلاڑی میں کرونا کی علامات ظاہر نہیں ہوئی ہیں لیکن انہیں آئسولیشن میں طبی سہولیات فراہم کی جا رہی ہیں. فرنچائز کا کہنا ہے کہ ڈینئل کا تین اپریل کو کورونا ٹیسٹ کیا گیا تھا جو منفی آیا تھا جب کہ بھارت آمد کے موقع پر بھی ان کی کورونا ٹیسٹ کی رپورٹ منفی تھی دوسری جانب بھارت میں بدھ کے روز دوبارہ ایک لاکھ سے زیادہ ریکارڈ کیسز رپورٹ ہونے کے بعد وزیر اعظم نریندر مودی کی ریاست گجرات میں میں پابندیاں نافذ کر دی گئی ہیں.
گجرات کے وزیراعلیٰ وجے روپانی نے اپنے ویڈیو پیغام میں ریاست میں سیاسی و سماجی اجتماعات پر پابندی کا اعلان کیا ہے وزیر اعلیٰ کا کہنا ہے کہ ریاست میں کرفیو کا دورانیہ بھی رات آٹھ بجے سے صبح چھ بجے تک رہے گا اور یہ 30 اپریل تک نافذ رہے گا. ریاست گجرات میں پابندیوں کا اعلان ایسے موقع پر کیا گیا ہے جب سب سے زیادہ متاثرہ ریاست مہاراشٹرا میں رات کا کرفیو نافذ ہے جب کہ ویک اینڈ پر لاک ڈاؤن کا اعلان کیا گیا ہے ماہرین کے مطابق کرونا وائرس کی دوسری لہر کے دوران عوام احتیاطی تدابیر پر عمل نہیں کر رہے اور وہ مذہبی و سیاسی اجتماعات میں شریک ہو رہے ہیں.