حکومتی جماعت سے نکالے جانےپر جشن؟؟؟

نوشہرہ میں ہونے والے حلقہ تریسٹھ کا انتخاب ۔۔۔تحریک انصاف کے دو ارکان کو گھر بٹھا گیا۔۔۔پہلا رکن جو کہ ضمنی انتخاب میں ن لیگ کے نمایندے سے ہارا۔۔۔دوسرا وہ جس نے تحریک انصاف میں ہوتے ہوئے ۔۔۔اپنی مخالف جماعتوں کے مشترکہ نمایندے کو جتوانے کام کیا۔۔۔وفاقی وزیر دفاع پرویز خٹک کے بھائی سابق صوبائی وزیر آب پاشی کو۔۔۔حکومتی کابینہ سے فارغ کردیا گیا ۔۔۔لیاقت خٹک پر الزام لگا تھا کہ انہوں نے ۔۔ نوشہرہ حلقہ تریسٹھ کے ضمنی انتخاب میں ۔۔۔مخالف سیاسی جماعت ن لیگ کے امیدوار۔۔۔ اختیار ولی کو جتوانے کے لیے کام کیا۔۔۔جس کی وجہ سے ۔۔۔ تحریک انصاف کو شکست کا سامنا کرنا پڑا۔۔۔تمام تر معاملے پر وزیراعلیٰ کے پی نے نوٹس لیا اور پارٹی ڈسپلن کے خلاف ایکشن لیا۔۔۔وزیراعظم اور وزیراعلیٰ نے مشاورت کے بعد لیاقت خٹک کو کابینہ سے نکال دیا گیا۔۔۔کابینہ سے نکالے جانے پر لیاقت خٹک اور ان کے بیٹے احد خٹک نے اپنے آبائی حلقے میں جشن منایا۔۔۔دونوں رہنماوں نے اپنی رہائش گاہ پر محفل موسیقی کا انعقاد کیا۔۔۔لیاقت خٹک کا تمام تر معاملے پر کہنا تھا کہ ۔۔۔ ان کی وزارت کےامور میں ۔۔۔ کوئی اور مداخلت کررہا تھا جس کی وجہ سے اختلافات کا آغاز ہوا۔۔۔ میرے اور بھائی کے درمیان اختلافات سیاسی نوعیت کے ہیں ۔۔۔ پی ٹی آئی کا کارکن تھا اور رہوں گا۔فی الحال کسی پارٹی میں جانے کا ارادہ نہیں۔۔ وزارت کا شوقین نہیں یہ آنے جانے والی چیز ہے ۔۔۔ انہوں نے مزید کہا کہ ۔۔۔ عوام ان کے ساتھ ہیں اور ان کے دوستوں نے ن لیگ کے نمایندے اختیار ولی کو جیت دلوائی ۔۔۔ ناظمین اتحاد کو الیکشن سے پہلے فری ہینڈ دیا گیا تھا کہ جسے چاہیں ووٹ دیں۔۔۔گزشتہ شب کا جشن انہوں نے نہیں بلکہ ناراض ناظمین نے منایا تھا۔۔۔ وزیراعظم عمران خان سے متعلق انہوں کہا کہ ۔۔۔ وزیراعظم سے ملاقات کا وقت مانگا تھا۔۔ جو کہ انہوں نے نہیں دیا۔۔۔ وہ آج پھر ایک بار میڈیا کے توسط سے عمران خان سے پانچ منٹ کا سوال کرتے ہیں ۔۔