جاپان میں پچھلے تیس سال میں چوری نہیں ہوئی

جاپان میں پچھلے تیس سال میں چوری نہیں ہوئی، نہ کوئی قتل ہوا۔کوئی بھوکا نہیں سوتا ۔ زلزلے کے وقت کیمپوں میں سب کچھ رکھ دیا جاتا ہے، کوئی ایک چھٹانک ضرورت سے زیادہ نہیں لیتا۔ دیانتداری میں دنیا میں پہلے نمبر پر ہے ، سڑک پر ایک کروڑ پھینک دیں کوئی نہیں اٹھاتا۔
آپ کندھا ماریں سامنے والا معذرت کرتا دکھائی دے گا۔ترقی اور ٹیکنالوجی میں دنیا سے دس سال آگے جیتے ہیں۔کام اتنا کرتے ہیں کہ وزیراعظم ہاتھ جوڑ کے آرام کے مشورے دے۔ سگریٹ کی راکھ جھاڑنے کی ڈبیا جیب میں رکھتے ہیں ۔ صفائی اتنی کہ سڑکوں میں منہ نظر آئے ۔ پابندی وقت اتنی کہ پانچ منٹ ٹرین لیٹ ھونے پر پوری کمپنی بند۔ اخلاق اتنا بلند آپ حیرت سے منہ تکتے رہ جائیں ، اخلاص مہمان نوازی اور ثقافت بھی کمال۔
چاول کی فصل مرغوب غذا، ایک دفعہ قحط پڑا ، تو تیس سال کا ایسا ذخیرہ کیا، کہ دنیا سے چاول نایاب ہو جائیں، لیکن ان کا ذخیرہ ختم نہ ہو۔
دو نمبری اور بےایمانی کا تصور محال۔