تمہیں وطن کی ہوائیں سلام کہتی ہیں

تجزیہ نگار زاہد خٹک چینل 51 تجزیہ نگار زاہد خٹک

خصوصی تحریر: زاہد خٹک

اگست آزادی کا مہینہ ،خوشی کے آنسو بہانے کا مہینہ اوروطن کیلئے قربانیاں دینے والوں کی یاد کا مہینہ ہے۔ 14اگست سے قبل ایک دن 4 اگست بھی آتا ہے۔۔جسے ہم یوم شہدائے پولیس کے نام سے مناتے ہیں۔

۔"شہادت"اللہ رب العزت کاخاص اعزاز ہے جسے وہ صرف اپنے منتخب کردہ خوش نصیب لوگوں کو ہی عطا کرتا ہے۔ پولیس کی آبیاری میں شامل ہزاروں شہداء کا لہو اس حقیقت کا عکاس ہے کہ ہمارے افسر و جوان عوام کی جان ومال کے تحفظ اورپیشہ ورانہ فرائض کی ادائیگی میں"شہید"کے رتبے پر فائز ہونا فخر سمجھتے ہیں۔آج مادر وطن کا دفاع اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اپنی جانوں کا نذرانہ پیش کرنے والوں کا دن ہے۔ ہم سلام پیش کرتے ہیں وطن کے ان رکھوالوں کو جن کے لہو سے امن کے چراغ روشن ہوئے۔

سلام ہے ان سپوتوں کو جن کی وجہ سے ہماری جان و مال،عزت اور آبرو محفوظ ہے۔۔پاکستان کےچاروں صوبوں کی پولیس کےکارنامے ہماری سنہری تاریخ کا حصہ ہیں۔۔ قربانیوں کی اس راہ میں خیبرپختونخوا پولیس واضح آگے نظر آتی ہے۔۔دہشت گردی کے خلاف جنگ میں ڈیڑھ ہزار سے زائد افسروں اور جوانوں نے اپنی جانیں قربان کیں۔ کمانڈنٹ ایف سی صفوت غیور ہمارا فخر ہیں۔

ایڈیشنل آئی جی اشرف نور،سی سی پی او پشاور ملک سعد اور ڈی آئی جی بنوں عابد علی، خان ڈی پی او اقبال مروت۔ایس پی خورشید ۔ اور ڈی ایس پی ۔خان رازق بہادری اور دلیری کی چند ایک مثالیں ہیں۔ قربانیوں کی داستاں اتنی طویل ہے کہ سب کا ذکر ممکن نہیں۔۔ہماری پولیس ہمارا فخر ہے قاضی جمیل ہوں،سیلمان چودھری یہ سب ہمارا غرور ہیں۔ فیروز شاہ،اخترحیات، عبدالغفور افریدی یا اشتیاق مروت،صلاح الدین نعیم خان۔ قدرت اللہ مروت سعید خان جیسے بہادر افسر پولیس میں بھرتی ہونےوالوں کیلئے مشعل راہ ہیں۔
بات کریں پنجاب پولیس کی تو امن کی اس آبیاری میں اس کے بھی ڈیڑھ ہزار جوانوں کا خون شامل ہے۔۔یزاروں شہدا ء کی قربانیاں پولیس کے ہر افسر و اہلکار کو یاد دہانی کراتی ہیں کہ پولیس فورس محض ایک ملازمت کا نام نہیں بلکہ انتہائی مقدس مشن ہے جسے وہ اپنے خون کے آخری قطرے تک پوری ایمانداری اور فرض شناسی کے ساتھ ادا کرتے رہیں گے۔

سندھ پولیس کی تاریخ بھی ایسی قربانیوں سے بھری پڑی ہے۔شہداء کی تختی پر ہزاروں اہلکاروں کا نام سجا ہے۔۔بلوچستان میں بھی ہمارے جوان امن کیلئے دن رات ایک کر رہے ہیں۔ ہماری پولیس کی جرات، بہادری اور انسانی ہمدردی کی ایسی مثالیں کہ آفرین۔۔ اپنی جانوں کی پرواہ کیے بغیر شب و روز ڈیوٹی نبھا رہے ہیں۔ اس مہم میں خواتین پولیس اہلکار بھی مردوں کے شانہ بشانہ ہیں۔

پاک فوج کے بعد اگر کسی نے دل و جان سے اپنے فرائض نبھائے ہیں تو وہ پولیس ہے۔۔عظیم قومیں اپنے شہداء کی لازوال قربانیوں کو کبھی فراموش نہیں کرتیں۔شہدائے پولیس محکمے کا قابل فخر سرمایہ ہیں۔سلام ان جوانوں کو جنہوں نے وطن پر جان واری۔۔ دن دیکھا نہ رات۔۔ ہمارے سکون کی خاطر اپنا سکون چھوڑا۔۔ ۔یہ قوم آپ کی احسان مند ہے۔

آپ کے مقدس جذبوں اور خدمت کو ہمارا سلام۔۔ اے پاک وطن تیرے جیالوں کو سلام،،اے پاک وطن تیرے رکھوالوں کو سلام،، سلام ان جوانوں کو جنہوں نے وطن پرزندگی وار دی،،سلام ان ماؤں پرجنہوں نے ایسے سپوتوں کو جنم دیا،، سلام ان بہنوں،بیواؤں اوربچوں پر جنہوں
نے شہداء کے مشن کو اپنا مشن سمجھا۔۔آج 4اگست ہے،،آپ بھی شہیدوں کی قبروں پر جایئے،، فاتحہ خوانی کیجیئے،، پھول چڑھایئے،،شہداء کے گھر حاضری دیں،،ان کی ہمت بندھایئے۔